قبائلیوں کا مردم شماری کے نتائج ماننے سے انکار

1341

ڈیرہ اسماعیل خان
پاکستان تحریک انصاف فاٹا کے چیف آرگنائزر دوست محمد محسود نے حالیہ مردم شماری میں قبائلی علاقہ جات سے متعلق اعداد و شمار اور آبادی میں حقائق سے انحراف کی رپورٹس پر شدید غم و غصے کا اظہار کرتے ہوئے اسے پندرہ سالوں سے دہشت گردی اور آپریشن کا شکار قبائلی عوام کے معاشی معاشرتی قتل کی سازش قرار دیا اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ اس زیادتی کو قبائلی عوام کسی صورت میں برداشت نہیں کریں گے چیف جسٹس آف پاکستان اور چیف آف آرمی سٹاف کو چاہیئے کہ وہ ان اطلاعات کا سختی سے نوٹس لیں اور قبائل کی آبادی اور دیگر اعداد و شمار کو کم ظاہر کرنے کو فوری روکنے کا حکم جاری کریں کیونکہ حقیقی آبادی سے کم آبادی ظاہر کرنے سے فاٹا اصلاحات ۔ فاٹا کی خیبر پختون خواہ میں شمولیت اور قومی و صوبائی اسمبلیوں میں نشستوں کے معاملے میں بھی قبائل اپنے حقوق سے محروم رہ جائیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ اس معاملہ پر کل جماعتی کانفرنس طلب کی جائے اور مسئلہ کے جامع حل اور زیادتی کے سدباب کا لائحہ عمل طے کیا جائے۔ انہوں نے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے اپیل کی کہ بلوچستان کی طرح قبائلی نوجوانوں کی عسکری اداروں اور دیگر اداروں میں ملازمتوں کے لیئے خصوصی پیکیج کا اعلان کریں تاکہ عسکریت پسندی کی مکمل حوصلہ شکنی ہو۔ انہوں نے کہا کہ قبائل میں صحت اور تعلیم کے اداروں کی بحالی پر توجہ فراہم کی جائے قبائل میں گھوسٹ تعلیمی اداروں اور مراکز صحت کے گھوسٹ ملازمین ملکی خزانے پر بوجھ ہیں ایسے گھوسٹ ملازمین کے خلاف سخت اور فوری ایکشن لیا جائے اور اس مقصد کے لیئے قبائل میں آرمی ٹیموں کی خدمات حاصل کی جائیں جو گھوسٹ ملازمین اور اداروں کی نشاندہی کریں:

نیوز ڈیسک یاغستان

46 Comments (تبصرے)

Leave A Reply (جواب چھوڑ دیں)